ایّامِ تشریق میں تکبیر کہنے کا حکم

شوافع اور حنابلہ﷭: سنّت ہے ۔
مالکیہ ﷭: مندوب ہے ۔
احناف﷭: سنت اور وجوب دونوں طرح کا قول ہے ،البتہ راجح اور مشہور قول کے مطابق تکبیراتِ تشریق واجب ہیں۔
(الموسوعۃ الفقہیۃ الکویتیۃ:7/325)
(عالمگیری:1/152)

تکبیراتِ تشریق کے کلمات

احناف وحنابلہ﷭:

”اللَّهُ أَكْبَرُ،اللَّهُ أَكْبَرُ،لاَ إِلَهَ إِلاَّ اللَّهُ وَاللَّهُ أَكْبَرُ،اللَّهُ أَكْبَرُ، وَلِلَّهِ الْحَمْدُ“ یعنی شروع میں” اللَّهُ أَكْبَرُ “ دو مرتبہ کہا جائے گا ۔

مالکیہ اور شوافع﷭:

”اللَّهُ أَكْبَرُ،اللَّهُ أَكْبَرُ، اللَّهُ أَكْبَرُ،لاَ إِلَهَ إِلاَّ اللَّهُ وَاللَّهُ أَكْبَرُ،اللَّهُ أَكْبَرُ، وَلِلَّهِ الْحَمْدُ“یعنی شروع میں” اللَّهُ أَكْبَرُ “تین مرتبہ کہا جائے گا۔
(الموسوعۃ الفقہیۃ الکویتیۃ:7/325)

تکبیراتِ تشریق کتنی مرتبہ کہی جائیں گی؟

احناف و حنابلہ﷭: تکبیرِ تشریق صرف ایک مرتبہ کہی جائے گی ۔

اِمام مالک : اختیار ہے، دو یا تین مرتبہ بھی کہی جاسکتی ہے۔

اِمام شافعی : تین مرتبہ تکبیر کہی جائے گی۔
(البنایۃ:3/129)

جمعہ اور عیدین کے مسائل و احکام: ۱۴۹

مفتی بندۂ الہی قریشی گندیوی

مطابق

سنیچر

26/08/2017

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here